Home / آرٹیکلز / دودھ میں یہ عام سی چیز ملا کر پی لیں نظر کی کمزوری

دودھ میں یہ عام سی چیز ملا کر پی لیں نظر کی کمزوری

سونف کے بے پناہ فوائد ہیں اور اسی لئے کہا جاتا ہے کہ ہر گھر میں سونف ضرور رکھنی چاہئے، یہ بچوں کے کئی امراض میں مفید ہے۔ دودھ میں سونف پکا کر بچوں کو پلانے سے پیٹ میں نہ درد ہوتا ہے نہ گیس بنتی ہے۔ آج کل چھوٹے بچوں کی نظر بھی کمزور ہو رہی ہے اس کیلئے تھوڑی سے سونف بچوں کی جیب میں ڈال دیں وہ چلتے پھرتے کھا لیں گے۔ اس سے نظر کی کمزوری بھی دور ہو جائے گی اور معدے کو بھی طاقت ملے گی۔

صبح چائے کا چمچ بھر سونف کھانے سے بینائی تیز ہوتی ہے۔ پرانے نزلہ کیلئے عموماََ خواتین رات کو سوتے وقت ایک بڑا چمچ سونف اور گیارہ بادام کھلاتی ہیں ا س سے نزلہ دور ہوتا ہے اور دماغ میں تری آتی ہے۔ اس کے فوراََ بعد چائے ، دودھ یا پانی نہیں پینا چاہئے۔ کچھ لوگوں کا ہاضمہ خراب رہتا ہے اور اسہال کی تکلیف سے نڈھال ہوتے ہیں۔ جہاں کچھ کھایا، پیٹ میں درد ہو گیا۔ انہیں چاہئے کہ سونف میں تھوڑی سی چینی ملا لیں

اور صبح شام ایک چھوٹا چمچ کھائیں اس سے ہاضمہ ٹھیک رہتا ہے اگر بیل گری مل جائے تو وہ بھی برابر وزن کر کے ملالیں جلدی فائدہ ہو گا۔ جرمنی میں چھوٹے بچوں کو اکثر دوائی نہیں دی جاتی بلکہ انہیں سونف کا پانی پلایا جاتا ہے ، سونف بازار میں عام دستیاب ہیں، سونف کا پانی ابل کر پلانے سے بچے کئی تکلیفوں سے نجات پا لیتے ہیں۔ بینائی کی کمزوری کی بہت سی وجوہات ہیں جن میں دماغی و اعصابی کمزوری سب سے زیادہ خطرناک اور توجہ طلب ہیں ۔

خوراک پر توجہ دے کر اور ضروری غذائی اجزاء کے حصول کے ذریعے نظر کی کمزوری کے عارضے سے بچا جاسکتا ہے ۔ اگر آپ اپنی روزمرہ کی خوراک میں زنک ،کیلشیم ، کاپر ، آئرن ، سلفر اور فاسفورس وغیرہ کی مناسب مقدار والے غذائی اجزاء شامل کرلیں تو آنکھوں کو صحت مند اور نظر کو بہتر بنایا جاسکتا ہے ۔ بچوں کو نظر کی کمزوری سے محفوظ رکھنے کے لئے ماہرین بادام ، مغزیات ، کھجور ، انجیر ، مچھلی ، زیتون اور اسی طرح کے بے شمار عناصر تجویز کرتے ہیں ۔

ماہرین یہ بھی مشورہ دیتے ہیں کہ بچے کو لیٹ کر پڑھنے ، کتاب کو آنکھوں کے بہت قریب کرنے اور کھانے کے فوری بعد پڑھنے سے منع کریں ۔ اس سے آنکھوں کی صحت پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں ۔ ٹی وی ، لیپ ٹاپ ، مونیٹر اور موبائل سکرین کا بہت زیادہ استعمال بھی آنکھوں کو متاثر کرتا ہے ۔ لہذا ان چیزوں سے بچوں کو دور رکھنا بہت ضروری ہے ۔ آنکھوں پر ٹھنڈے پانی کے چھینٹے مارنا ، سبزے کی طرف ٹکٹکی باندھ کر دیکھنا ، بہتے پانی پر نگاہیں جمانا اور بصارت کو تیز کرنے والی آنکھوں کی ورزشیں بھی نظر تیز کرنے میں معاون ثابت ہوتی ہیں ۔

About admin

Check Also

عورت صرف بچے پیدا کرنے کی مشین نہیں

کیا ہم نے کبھی سوچا ہے کہ ہمارے معاشرہ میں عورت مرد سے پہلے کیوں …

Leave a Reply

Your email address will not be published.