Home / آرٹیکلز (page 4)

آرٹیکلز

وعدہ پورا کرنا

ایک بوڑھا بھرے دربار میں داخل ہوا اور بے دھڑک بادشاہ کے پاس جاکر اس سے اپنا قرض مانگنے لگا ، تمام درباری بوڑھے کی ہمت دیکھ کر حیران رہ گئے اور سوچنے لگے کہ آج تو بوڑھے کی جان بخشی نہیں جائےگی ، مگر بادشاہ کے ماتھے پر ذرا …

Read More »

ایک موچی کا حج

حضرت عبداللہ بن مبارک رحمتہ اللہ علیہ ایک مرتبہ فراغت حج کے بعد بیت اللہ میں سو گئے اور خواب میں دیکھا کہ دو فرشتے باہم باتیں کر رہے ہیں، اور ایک نے دوسرے سے سوال کیا کہ اس سال کتنے لوگ حج میں شریک ہوئے اور کتنے افراد کا …

Read More »

(بسم اللہ) 786

میں رات کی تاریکی میں کھڑکی کے قریب بیٹھا، ہاتھ میں قلم اور کاغذ لئے کچھ لکھنے کی کوشش میں بہت سے صفحے ضائع کر چکا تھا اور آسمان میں آدھے چاند کے ساتھ چند تارے تھے، نجانے کیوں اب شہروں میں تارے نظر آنا کم ہو گئے ہیں. مجھے …

Read More »

“زندگی سے منہ نہ موڑو”

آئینہ میں اپنا چہرہ دیکھ کر اسے خود سے نفرت ہو گئی ، ایسڈ سے جھلسی ہوئی جلد اور جلے ہوۂے بال جھلسے ہوۂے کان دیکھ کر امنہ نے زندگی جینے کی امید چھوڑ دی تھی . ایک وقت تھا جب یہ لڑکی زندگی کو کھل کر جیا کرتی تھی.وہ …

Read More »

سردیوں کی ایک ڈراونی رات

سنہ 1999-2000عہ میں میں ڈھوک کٹھان موضع آڑا تحصیل چوآ سیدن شاہ کے علاقے میں کوئلے کی ایک کان میں بطور مائیننگ انجینئر کام کرتا تھا۔ مائن اونر نے پہلے  تو چوآ میں واقع سب آفس میں رہائش دی مگر بعد میں سائٹ پر شفٹ ہو نیکا کہا تاکہ جیسے …

Read More »

غرورکی سزا

ایک جنگل میں منٹواور پنٹونامی دو بندرہتے تھے۔ دونوں دن بھرخوب اچھلتے اور شرارتیں کرتے۔ منٹو عادت کا اچھا اور رحمددل تھاجبکہ پنٹو غصیلا اور مغرور طبیعت کامالک تھا۔ کبھی کبھی منٹواسے سمجھاتاتو منٹو کہتا۔ میں پھر تیلابندرہوں۔ میری پھرتی اور اونچی چھلانگ کاکوئی مقابلہ نہیں کرسکتا۔ منٹوایک دن جنگل …

Read More »

ریچھ کا شکار

کاغان کی خوب صورت وادی مغربی پاکستان کے شمال میں واقع ہے۔ اس کا موسم کشمیر کی طرح نہایت خوشگوار ہوتا ہے۔ یہ علاقے چاروں طرف سے بلند پہاڑوں سے گھرا ہوا ہے، جن میں صاف شفاف پانی کی ندیاں بہتی ہیں۔ اس وادی میں بالاکوٹ کے مقام پر ایک …

Read More »

نوحہ گر

ایک بوسیدہ مکان میں ہم چار ’’جاندار‘‘ اکھٹے رہا کرتے تھے۔ ابا، اماں، میں اور ایک سفید بکری۔ میں چارپائی سے بندھاہر روز۔۔۔ بکری کو ممیاتے، ماں کو بڑبڑاتے اور ابا کے ماتھے پر موجود لکیروں کو سکڑتے پھیلتے دیکھا کرتا۔ میری ماں زیرلب کیا بڑبڑایا کرتی تھی۔۔۔؟ کبھی سن …

Read More »

کبالہ

یہ ان دنوں کی بات ہے جب اس نے ایک نیا حکمنامہ حاصل کرنے کے لیے عدالت سے رجوع کیا تھا۔ میں عدالت کی بجائے عدالت عالیہ کا لفظ استعمال کروں تو زیادہ بہتر ہوگا۔ اسے عدالت عالیہ سے بڑی امیدیں تھیں کہ وہ اس کی بات ضرور سنیں گے …

Read More »

اک چپ سو دکھ

ایک وقت آتا ہے جب کچھ بھی ٹھیک ٹھیک یاد نہیں رہتا اگرچہ کچھ نہ کچھ ہمیشہ یاد رہتا ہے اور وہ وقت مجھے ہمیشہ یاد رہا جب اس نے مجھ سے کلام کیا تھا۔ یہ ایک تپتے دن کی تپش بھری شام تھی اور میں اس قہوہ خانے میں …

Read More »